Sunday, 22 November 2015

Rehny Na Diya Kisi Kaam Ka Mujhy - Hashim Nadeem

Rehny Na Diya Kisi Kaam Ka Mujhy
Aur Khaak Mein Bhi Mujh Ko Mila Kar Nahi Gaya. .


Thursday, 17 September 2015

Woh Fariab Khurda Shaheen - Allama Muhammad Iqbal

Wo faraib-khurda shaheen, jo pala ho kargaso'n mein
Usay kia khabar k kia hai, raah-o-rasm-shahbazi

Poet : Allama Iqbal
Book : Baal-e-Jibreel

Sunday, 26 April 2015

Dost Ban Kar Bhi Nahi Sath Nibhanay Wala - Urdu Poetry

Dost ban kar bhi nahi sath nibhanay wala
Wohi andaaz hai zaalim ka zamanay wala. . !

دوست بن کر بھی نہیں ساتھ نبھانے والا
وہی انداز ہے ظالم کا زمانے والا

Monday, 6 April 2015

Abhi Laut Aa Mery Gumshuda - Sad Urdu Poetry

Abhi Waqt Hai, Abhi Sans Hai, Abhi Laut Aa Mery Gumshuda
Mujhy Naaz hai mery zabt par, mujhy phir rula mery gumshuda

Ye nahin k tery firaaq mein, mein ujarr gaya ya bikhar gaya
Haan! Mohabbato'n pe jo maan tha, wo nahi raha mery gumshuda

Mujhy ilm hai k tu chaand hai kisi aur ka, magar aik pal
Mery aasman-e-hayaat pe zara muskura mery gumshuda

Tery altafaat ki baarishain, Jo meri nahi to bata mujhy
Tery dasht-e-chah mein kis liye, mera dil jala mery gumshuda?

Ghanay jangalo'n mein ghira hoon mein, Barra Ghup andhera hai chaar soo
Koi aik charaagh to jal uthay. . Zara muskura mery gumshuda. . . !

Abhi Laut Aa Mery Gumshuda - Best Urdu Poetry



ابھی وقت ہے، ابھی سانس ہے، ابھی لوٹ آ میرے گمشدہ
مجھے ناز ہے میرے ضبط پہ، مجھے پھر رُلا میرے گمشدہ

یہ نہیں کہ تیرے فراق میں، میں اجڑ گیا یا بکھر گیا
ہاں محبتوں پہ جو مان تھا، وہ نہیں رہا میرے گمشدہ

مجھے علم ہے کہ تُو چاند ہے کسی اور کا مگر ایک پَل
میرے آسمانِ حیات پہ ذرا مسکرا میرے گمشدہ

تیرے التفات کی بارشیں، جو میری نہیں تو بتا مجھے
تیرے دشتِ چاہ میں کِس لئیے میرا دِل جلا میرے گمشدہ؟

گھنے جنگلوں میں گِھرا ہوں میں، بڑا گُھپ اندھیرا ہے چار سُو
کوئی ِایک چراغ تو جل اُٹھے۔ ۔ ذرا مسکرا میرے گمشدہ


Sunday, 5 April 2015

Pehchaan Ho Gai Kaee Logo'n Ki Is Tarha - Urdu Poetry

Pehchaan Ho Gai Kaee Logo'n Ki Is Tarha
Aai Hai Kaam Youn Bhi Zarurat Kabhi Kabhi




پہچان ہو گئی کئی لوگوں کی اس طرح
آئی ہے کام یوں بھی ضرورت کبھی کبھی